ہم نے پشاور میں اپنے ایجنٹوں کی دوڑیں لگائی کہ اس رنگ اور شکل و شباہت کا

0
1552

دنیا کا ہر ملک اپنے مفاد کا سوچتا ہے یہ کیسے ہوسکتا ہے
کہ امریکہ افغانستان میں ہمارے ازلی دشمن بھارت کو لا کر بٹھائے،اس کے اٹھارہ سے زائد قونصل خانے کھولے،پاکستان کے خلاف لڑنے والے گروپوں کے لیے افغانستان کی سرزمین جنت بنائے اور آئی ایس آئی، سی آئی اے سے دوستی نبھاتی پھرے بھائی جہاں جہاں ہمارا ہاتھ پیر چل سکتا ہے ہم چلائیں گے ، اکھاڑو جو اکھاڑنا ہے.

بہت باتیں ہیں لیکن شاید ان کا اظہار قبل از وقت ہے،یا پھر وہ کبھی سامنے ہی نہ لائی جاسکے، پشاور میں میری ڈیوٹی تھی ایک دن ہمیں اطلاع ملی کہ امریکہ سے چلا سی آئی اے کا ایک ڈیلی گیشن پشاور میں ہمارے پاس ٹی بریک کرکے افغانستان روانہ ہوگا،ہمیں اپنے ذرائع سے ڈیلی گیشن سے متعلق تمام تفصیلات ملیں،ہمیں یہ بھی معلوم ہوا کہ ان کے ساتھ ایک جاسوس کتا بھی ہے جو پہلی بار افغانستان لایا جا رہا ہے،ہمیں اس کتے کی تصویریں بھی مل چکی تھیں،

ہم نے پشاور میں اپنے ایجنٹوں کی دوڑیں لگائی کہ اس رنگ اور شکل و شباہت کا کتا چاہئے،ایک قصائی والے کی دکان کے آس پاس سے ہمیں مطلوبہ کتا ملا، ہم نے اسے نہلا دھلا کر اس کا مکمل میک اپ کردیا،امریکی ڈیلی گیشن پہنچ چکا تھا،انہیں چائے اور باتوں پہ لگا کر ہم نے کتے کو ری پلیس کردیا، اپنا کتا وہاں رکھ کر ان کا کتا اٹھا لیا،

ڈیلی گیشن افغانستان پہنچا،ایک آدھ دن کے بعد انہوں نے امریکہ رابطہ کیا کہ کتا افغانستان میں کام نہیں کر رہا ہے،امریکہ سے ڈاکٹروں کی خصوصی ٹیم وہاں پہنچ گئی لیکن کتا پھر بھی ان ایکشن نہیں ہوا،وہ کتا لیکر مایوس واپس چلے گئے بعد میں کافی مہینوں بعد جب امریکہ میں اس کتے کو ٹرینڈ کرنے والوں نے کوائف وغیرہ کی جانچ پڑتال کردی تو معلوم پڑا کہ یہ کتا تو ہمارا ہے ہی نہیں،تب تک ہم امریکی کتے کو اپنے کام لاچکے تھے،بہرحال بعد ازاں انہیں معلوم تو ہوا لیکن وہ اپنی سبکی سمجھ کر خاموش ہوئے.

جیسا تم کروگے ویسا ہم کریں گے
تم ہمارے رشتہ دار تھوڑی ہو
ٹرمپو تیرے سارے ٹبر دی سری

Credit #PAKSOLDIER_HAFEEZ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here