وزیراعظم نواز شریف کے حکم پر وزیراعلی شہباز شریف کا ھائی کورٹ کے جج جسٹس ملک قیوم کو فون

0
180

وزیراعظم نواز شریف کے حکم پر وزیراعلی شہباز شریف کا ھائی کورٹ کے جج جسٹس ملک قیوم کو فون ۔۔۔۔۔۔۔۔

” چیف منسٹر پنجاب بات کرینگے ” ۔۔ پی ایس

” جی میاں صاحب السلام علیکم ” ۔۔۔ جسٹس ملک قیوم

“کیا حال ہیں؟” ۔۔۔ شہباز شریف

“جی ٹھیک ٹھاک بڑی مہربانی، آپ سنائیں” ۔۔۔ جسٹس ملک قیوم

“آپ کی دعا ہے” ۔۔۔ شہباز شریف

“بس جی آپ بھائی ہو” ۔۔۔ جسٹس ملک قیوم

“وہ میں نے کچھ آپ سے گزارش کی تھی” ۔۔۔ شہباز شریف

“وہ تو میں نے ختم کر دیا تھا” ۔۔۔۔ جسٹس ملک قیوم

“بڑی مہربانی۔ دوسرا وہ چوہدری سرور کا جو معاملہ ہے، وہ مجھے بڑے بھائی صاحب نے کہا تھا، مہربانی کر کے اس کا دھیان کرنا” ۔۔۔ شہباز شریف

“کون چودھری سرور” جسٹس ملک قیوم

” ایم این اے ” ۔۔۔ شہباز شریف

” اسے کیا ہوا جی ” ۔۔ جسٹس ملک قیوم

” آپ کے پاس اسکا کوئی کیس ہے” شہاز شریف

“نااہلی کا؟” ۔۔ جسٹس ملک قیوم

” جی ہاں جی ہاں” ۔۔۔۔ شہباز شریف

“چودھری سرور کا خیال کرنا ہے؟” ۔۔۔۔ جسٹس ملک قیوم

” جی ہاں ” ۔۔۔ شہباز شریف

” چلو جی کوئی بات نہیں کر دیا ” ۔۔ جسٹس ملک قیوم

” مہربانی ” شہاز شریف

” کر دیا جی، میاں صاحب نے کہا تو بات ختم ہوگئی” جسٹس ملک قیوم

” بہت بہت شکریہ ” شہباز شریف

اسے کہتے ہیں ججوں کو ہدایات دینا۔ یہ ریکارڈنگ جب سامنے آئی تو سپریم کورٹ کے لاجرز بینچ نے تسلیم کیا کہ ھائی کورٹ کے مذکورہ ججز شریف برادران سے ہدایات لے رہے تھے۔ جسٹس عبدالقیوم اور جسٹس راشد عزیز کو استعفی دینا پڑا لیکن شریف برادران کا کچھ نہیں بگڑا۔

یہ شریف برداران آج تحریک عدل چلانے کی بات کر رہے ہیں اور فرما رہے ہیں کہ ” ججز کہیں اور سے ہدایات لے رہے ہیں ” ۔۔۔ 🙂

تحریر شاہد خان

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

بھائی لوگو

Related Pakistan

انسٹال کرو اور مزے مزے کے مضامین پڑھو۔ اگر انسٹال ہے تو اپڈیٹ کرلو۔۔۔۔ اور ایڈورٹائزنگ سے تنگ نہیں ہونا ۔۔۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here