نواز شریف اور پاک فوج کے سپاہ سالار

0
224

نواز شریف اور پاک فوج کے سپاہ سالار ۔۔۔۔۔۔

نواز شریف جنرل مرزا اسلم بیگ کے ساتھ مسلسل محاذآرائی کی سی کیفیت میں رہے۔ ان دونوں کے تعلقات آج تک خراب ہیں۔

نواز شریف کی جنرل آصف نواز جنجوعہ کے ساتھ بھی محاذ آرائی جاری رہی جو بلاآخر جنرل آصف نواز جنجوعہ کی پراسرار موت پر ختم ہوئی۔ کئی حلقوں میں یہ بات گردش کرتی رہی کہ ان کو میاں نواز شریف نے زہر دے کر قتل کروایا تھا۔

نواز شریف صدر غلام اسحاق خان کے والے معاملے کی وجہ سے جنرل وحید کاکڑ کے ساتھ بھی محاذ آرائی کرتے رہے جس کے بعد جنرل وحید کاکڑ نے ان سے استعفی لے لیا۔

جنرل جہانگیر کرامت نے ایٹمی دھماکوں میں پس و پیش کرتے نواز شریف کو پاک فوج کا پیغام پہنچایا اور قومی سلامتی سے متعلقہ معاملات کے لیے ایک فوجی مشیر رکھنے کی تجویز پیش کی جس کے جواب میں نواز شریف نے جنرل جہانگر کرامت سے زبردستی استعفی لے لیا۔

کارگل سے پسپائی کے فیصلے پر نواز شریف کی جنرل پرویز مشرف کے ساتھ محاذ آرائی سے آپ سب واقف ہیں۔ جس میں بلاآخر نواز شریف نے جنرل مشرف کو زبردستی انڈیا کے حوالے کرنے کی کوشش کی اور جس کا انجام پرویز مشرف کے مارشل لاء کی صورت میں سامنے آیا۔

جنرل کیانی کو نواز شریف کے ساتھ صرف دو تین ماہ ہی کام کرنے کے موقع ملا لہذا وہ نواز شریف کے شر سے محفوظ رہے۔

البتہ پاکستان کے دبنگ سپاہ سالار راحیل شریف محفوظ نہ رہ سکے۔ تب سوشل میڈیا کا دور شروع ہو چکا تھا اور نواز شریف کی بیٹی مریم نواز نے اپنی سوشل میڈیا ٹیم کے ساتھ ملکر راحیل شریف کو خوب گندہ کرنے کی کوشش کی۔ راحیل شریف کی ریٹائرمنٹ تک نواز شریف کی ان سے محاذ آرائی کی خبریں روز کا معمول تھیں۔

خیر سے اب جنرل باجوہ صاحب کی باری ہے۔ نواز شریف ان کو خلائی مخلوق سمیت مختلف القابات سے نواز رہے ہیں اور ان کو اپنی نااہلی کا ذمہ دار سمجھتے ہیں اور اپنے سوشل میڈیا ونگ کے ذریعے ان کو مسلسل نشانے پر رکھا ہوا ہے۔

کسی ایک سپاہ سالار کے ساتھ بھی نواز شریف کا گزارا نہیں ہوسکا!
سب ہی خراب تھے یا خود ان کی ذات میں کوئی مسئلہ ہے؟

تحریر شاہدخان

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here