جب اقوام متحدہ میں ہماری نمائندہ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے دنیا کے ممالک کے مندوبین کے سامنے کشمیریوں پہ بھارتی مظالم کی

0
20

جب اقوام متحدہ میں ہماری نمائندہ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے دنیا کے ممالک کے مندوبین کے سامنے کشمیریوں پہ بھارتی مظالم کی ایک مثال کے طور پہ ایک نمائندہ تصویر پیش کی تو تمام بھارتی جھوٹ اور پراپوگینڈے کا طوفان بپا کر بیٹھے۔

ڈاکٹر ملیحہ نے ایک تصویر دکھا کر دنیا کو باور کرایا کہ بھارتی قبضہ کے خلاف احتجاج کرنے والے کشمیری کس طرح کے خوفناک
زخموں کے ساتھ زندگی بسر کرتے ہیں چھرّے مارنے والی بندوق یا پیلٹ گن کا کشمیری مظاہرین پہ وافر استعمال کا بھارت خود اعتراف کر چکا ہے اور اس طریقہ کار کو بھارتی پولیس اور فوج “غیر مہلک طریقۂ نفاظ قانون” گردانتے ہیں

– مگر ڈاکٹر ملیحہ نے ایک تصویر کے زریعہ دنیا کو دکھایا کہ بھارت اپنی جس بربریت کو غیر مہلک گردانتا ہے وہ شاید کشمیری نوجولنوں کو فوراً تو نھیں مارتی مگر چہرے مسخ ہونے اور بینائ اور ان کے جسموں کو کئ دوسرے دور رس نقصان پہنچا کر کن کی زندگی تباہ کر دیتی ہے ۔اور یہ سب اس لیئے کہ اپنے آپ کو دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کا تمغہ دینے والا ملک کشمیری عوام کا احتجاج کرنے کا بنیادی حق ان سے چھین کر کشمیریوں کو بھارتی قبضہ زبردستی منوانا چاہتا ہے ۔

بھارتی قوم جو جھوٹ بولنے، بیغیرتی اور ڈھٹائ میں اپنی مثال آپ ہے ، ڈاکٹر ملیحہ کی جامع تقریر میں اٹھاۓ گئے ٹھوس موضوعات کا جواب نہ دے سکی تو ایک تصویر کے پیچھے پڑ گئے۔ اور بھرتی جواب بھی کًا دیتے کیونکہ ڈاکٹر ملیحہ نے جو کہا سچ کہا اور سچ کے سوا کچھ نہ کہا ڈاکٹر ملیحہ کی اقوام عالم کے سامنے دبنگ تقریر نے بھارت کا پول کھولا اور بھارتی جمہوریت کا مکروہ چہرہ دنیا کو دکھایا ۔ تو بھارتی ہوشیارر بنتے بنتے اپنے دوست ملی اسرائیل کو بھی ننگا کر بیٹھے ۔

بھارتی میڈیا ، انٹر نیٹ اور اخبار چیخنے لگے کہ ڈاکٹر،ملیحہ نے جو تصویر دکھائ وہ تو فلسطینیوں پہ اسرائیلی مظالم کی ہے ۔
چنانچہ بیچارے بھارتی خود تو ننگے ہوئے ہی تھے ، اپنے دوست ملک کو بھی ننگا کر بیٹھے ، اور اًک ہی وار میں پاکستان کی ڈاکٹر ملیحہ نے اسائیل اور بھارت کے اپنے اپنے مقبوضہ علاقوں کے عوام پہ کیئے گئے مظالم سے دنیا کو آگاہ کر دیا

اس بات کا گمان کیا جا سکتا ہے کہ اسرائیلی وزیراعظم اپنے بھارتی دوست نرندر مودی کو فون کر کہ کہ رہا ہو کہ اپنے بھارتیوں کو روکو، تم تو ننگے ہو ہی گئے ، ساتھ ہمارا پول بھی کیوں کھول رہے ہو اور تصویر کے معاملے کو اچھال اچھال کر اقوام عالم کو کیوں آگاہ کر رہے ہو کہ تمہاری طرح ہم بھی فلسطینیوں کو چھرّے مار کر ان کی زندگیاں تباہ کر دیتے ہیں ۔ ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here