جب آئی ایس آئی کی بنیاد رکھی گئی حصہ دوم

0
94

جب آئی ایس آئی کی بنیاد رکھی گئی حصہ دوم

بدقسمتی سے جنگ کشمیر(1947ء )میں آئی بی دشمن کے خلاف موثر کردار ادا نہیں کر سکی۔ بھارتی مقبوضہ کشمیر پر قبضہ کرنے میں کامیاب رہے۔ اس ناکامی کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ پاکستانی آئی بی کے افسر و کارکن اندرون ملک انٹیلی جنس معاملات کا تجربہ رکھتے تھے۔ جب غیرملکی سرزمین پہ انھیں سراغ رسانی کی حساس و نفیس ترین سرگرمیاں انجام دینا پڑیں، تو ناتجربہ کاری کے باعث وہ ان کو صحیح طرح نہ نبھا سکے۔

سو پاکستانی عسکری و سیاسی قیادت نے فیصلہ کیا کہ دشمن کے مذموم منصوبے ناکام بنانے کی خاطر نئے خفیہ ادارے قائم کیے جائیں۔ خاک سے نیا ڈھانچا بنانا پڑا قیام پاکستان کے وقت شعبہ جاسوسی سے متعلق صرف ایک تربیتی ادارہ’’اسکول آف ملٹری انٹیلی جنس‘‘پاکستانی سیکورٹی فورسز کے حصے میں آیا۔ یہ تب تک کراچی سے مری منتقل ہو چکا تھا۔

جب آئی ایس آئی کی بنیاد رکھی گئی حصہ اؤل

اس کے پہلے پاکستانی کمانڈر،کیپٹن اختر عالم مقرر ہوئے۔ دسمبر 1947ء میں انٹیلی جنس کا وسیع تجربہ رکھنے والے مسلم فوجی افسر، میجر محمد ظہیر الدین کو اس کا سربراہ بنایا گیا۔ اسی اسکول میں پاکستانی انٹیلی جنس اداروں میں اپنے فرائض انجام دینے والے اولیّں افسروں اور ماہرین نے جاسوسی و سراغ رسانی کی تربیت پائی اور دفاع ِوطن کو مستحکم کرنے میں اپنا کردار ادا کیا۔ جیسا کہ پہلے بتایا گیا، ابتداً پاک افواج بے سر وسامانی کی حالت میں تھیں۔ سو دفاع کا سارا ڈھانچا اور انفراسٹرکچر اصلتاً خاک سے نئے طور پہ تخلیق کرنا پڑا۔

جب آئی ایس آئی کی بنیاد رکھی گئی حصہ سوئم

اسی لیے پہلے پہل ملٹری انٹیلی جنس سے متعلق معاملات شعبہ ایم او(ملٹری آپریشنز) کو سونپ دئیے گئے جس کی قیادت بریگیڈئر محمد شیر خان کر رہے تھے۔ تجربے کار افرادی قوت کی شدید کمی تھی۔

صورت حال کا اندازہ یوں لگائیے کہ آزادی کے وقت پاک فوج میں صرف ایک میجر جنرل، دو بریگیڈئر اور ترپین (53) کرنل موجود تھے۔ آخر اسکول آف ملٹری انٹیلی جنس سے تربیت پانے والے ماہرین کا پہلا دستہ نکلا،

جب آئی ایس آئی کی بنیاد رکھی گئی حصہ چہارم

تو مارچ 1948ء میں ’’ایم آئی‘‘ (ملٹری انٹیلی جنس) کی بنیاد رکھی گئی۔ اس کے پہلے سربراہ مایہ ناز مسلم فوجی افسر، کرنل محمد عبدالطیف خان بنائے گئے۔ یوں ان کی ان تھک رہنمائی میں ایم آئی کا سفر شروع ہوا۔

اس کے بعد جلدہی ایک شاندارخفیہ ادارے ،انٹر سروسز انٹیلی جنس کا قیام عمل میں آیا جو آج بہ حیثیت ’’آئی ایس آئی‘‘ جانا جاتا ہے…وہ خفیہ ادارہ جس کا نام سنتے ہی دشمن خوف سے تھّرا اٹھتا ہے

 

جب آئی ایس آئی کی بنیاد رکھی گئی آخری حصہ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here